- جمعه
December 14, 2018

انسانی حقوق کی ویب سائٹ حقیقت

اصغر خان کیس؛ نوازشریف اور سراج الحق کی آئی ایس آئی سے رقم وصول کرنے کی تردید



اصغر خان کیس؛ نوازشریف اور سراج الحق کی آئی ایس آئی سے رقم وصول کرنے کی تردید

اصغر خان کیس میں سابق وزیر اعظم نواز شریف اور امیر جماعت اسلامی سراج الحق نے اپنے بیانات سپریم کورٹ میں جمع کرا دئیے۔ نوازشریف نے کہا کہ جنرل اسد درانی سے پیسے لیے نہ یونس حبیب سے کوئی رقم وصول کی جبکہ سراج الحق نے بھی الزامات کو غلط قرار دے دیا۔



اصغر خان کیس میں نوازشریف کی جانب سے جواب سپریم کورٹ میں جمع کرا دیا گیا۔ سابق وزیر اعظم نے اسد درانی اور یونس حبیب سے پیسے لینے کے الزامات مسترد کر دئیے۔ اپنے بیان میں نواز شریف نے کہا ہے کہ لیفٹیننٹ جنرل اسد درانی یا ان کے کسی نمائندے سے 35 لاکھ روپے نہیں لیے۔ یونس حبیب سے بھی 60 لاکھ روپے وصول کر نے کا الزام بے بنیاد ہے ۔ سابق وزیر اعظم نے کہا کہ اس حوالے سے 14اکتوبر 2015 کو ایف آئی اے تحقیقاتی ٹیم کے سامنے بیان ریکارڈ کروا چکا ہوں۔

امیر جماعت اسلامی سرا ج الحق نے اپنے بیان میں کہا ہے کہ جماعت اسلامی نے آئی ایس آئی سمیت کسی سے کبھی کوئی رقم نہیں لی، جماعت اسلامی 2007 میں رضاکارانہ طور پر عدالتی کارروائی کا حصہ بنی۔ بیان حلفی دیا تھا کہ جماعت اسلامی پر عائد الزامات غلط ہیں، بطور امیر جماعت کسی بھی فورم پر پیش ہونےکو تیار ہوں۔

دوسری جانب ایف آئی اے کی تحقیقاتی ٹیم نے یونس حبیب، یوسف میمن، آفاق احمد، جام معشوق، جام حیدر اور امتیاز شیخ کو بھی آج ہی کراچی دفتر میں پیش ہونے کا حکم دے دیا۔ تمام افراد کو اصغر خان کیس سے متعلق ریکارڈ اور دستاویزات ساتھ لانے کا حکم دیا گیا ہے۔ ذرائع کے مطابق ایف آئی اے شہباز شریف اور جاوید ہاشمی کو پیسے دینے متعلق یونس حبیب اور یوسف میمن کے بیانات کی بھی تحقیقات کرے گی۔

ٹیگ

نوازشریف،سراج الحق،پاکستان

اپنے نوٹ بھیجیں

آپ کے نوٹ

آپ کا نوٹ

free website counter